یہ بابو راؤ کا اسٹائل ہے

|
جولائی 10, 2017


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
ہیرا پھیری کے بابو بھیاء، پریش راول نے بھارتیوں کے ساتھ پھر ہیرا پھیری کردی۔ تقریباً مہینہ پہلے پریش راول نے انٹرویو میں پاکستانی ڈراموں اور فنکاروں کی تعریف کی تھی۔ پاکستانی ڈرامے "ہم سفر "کو سراہا تھا  اور نہ طرف پاکستانی فلموں میں کام کرنے کی خواہش ظاہر کی تھی بلکہ اپنے ڈراموں کو "بورنگ" بھی کہا تھا۔
مگر اسکےکچھ دنوں  بعد اچانک  انھوں نے اپنے بیان کو بدل دیا تھا۔ اب پریش راول زیادہ دن خاموش نہ رہ سکے اور انھوں نے کھل کر سچ کہہ دیا ہے۔ بھارت میں دیے حالیہ انٹر ویو میں انکا کہنا تھا کہ پاکستانی فنکاروں اور ڈراموں پر ان کے تاثرات سن کر بھارتی میڈیا نے انھیں کوسنا شروع کردیا تھا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ میں نے پاکستانی  شوز کے بارے میں ایسا ہی کچھ پہلے 2014 میں بھی کہا ہے۔
انھوں نے انٹرویو میں عقل کی بات کی جو شاید بھارتی میڈیا سمجھ ہی نہیں سکتاکہ اگر میں عمران خان کو اچھا کرکٹر کہوں تو کیا سنیل گواسکر برے کرکٹر ہوجائیں گے؟؟ پریش راول نے پاکستانی ٹیم کو آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی جیتنے پر ٹوئیٹر پیغام کے ذریعے مبارکباد بھی پیش کی تھی ۔
بھارتی میڈیا  کسی غنڈے یا دہشت گرد سے کم نہیں ہے جس کا کام صرف مسلمانوں اور  خصوصاً پاکستانیوں کے خلاف اپنی عوام کو بھڑکانا ہے۔ پریش راول وہ پہلے شخص نہیں جن کے ساتھ ایسا رویہ اختیار کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے کئی بھارتی اداکار و فنکار کے ساتھ اسی طرح کیا گیا جس میں اوم  پوری کو تو سبھی جانتے ہیں۔ بھارتی میڈیا کی غنڈا گردی ختم ہو یا نہیں ، پاکستان کی اچھائی سب کو نظر آتی رہے گی۔۔۔
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial