بالی وڈ راج

|
اگست 7, 2017


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
کراچی کی سڑکوں پر جہاں پاکستانی فلموں کے بینر ہونے چاہیئے تھے وہاں اکشے کمار اور شاہ رخ خان مسکرا رہے ہیں۔ کیپری سنیما میں یومِ آزادی پر کوئی پاکستانی فلم نہیں دکھائی جائے گی کیونکہ بھارتی فلم ہی سب کچھ ہے۔ شاہ رخ خان کی فلم جب ہیری میٹ سیجل حال میں دکھائی جارہی ہے جب کہ گیارہ اگست کو ریلیز ہونی والی اکشے کمار کی فلم"ٹوائلیٹ: ایک پریم کتھا " کا کیپری سنیما بے صبری سے انتظار کر رہا ہے۔
اس ہفتے دو پاکستانی فلمیں "جیو سر اٹھا کے اور " چین آئے نہ" یومِ آزادی سے پہلے ریلیز کی جائیں گی۔ کیپری سنیما نے کراچی کی عوام کو یومِ آزادی کا تحفہ یونہی دینے کا فیصلہ کیا ہے کہ بھارتی اداکاروں کو دیکھتے ہوئے سب پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائیں گے۔
اس حقیقت سے منہ نہیں پھیرا جا سکتا کہ کچھ پاکستانی فلم اس قابل ہی نہیں بنتی کہ لوگ اسے دیکھنےکے لیے گھر سے نکلیں ۔ سنیما چاہے کوئی بھی ہو اسے اپنے اخراجات کے ساتھ منافع کی طرف نظر بھی رکھنی ہے۔ مگر کیپری سنیما کراچی کی پہچان میں سے ہے۔اس میں کوئی ایک بھی پاکستانی فلم کا نہ ہونا کسی المیے سے کم نہیں ہے۔
جہاں تک فلم کی کامیابی اور ناکامی کی بات ہے تو جب ہیری میٹ سیجل نے بھی کوئی کارنامہ انجام نہیں دیا ہے۔ شاہ رخ خان کے بڑے بڑے پوسٹر سب دھرے کے دھرے رہ گئے۔ جب کیپری سنیما راستہ جیسی فلمیں دکھا سکتا ہے تو "جیو سر اٹھا کر" اور " چین آئے نہ" تو پھر بھی فلم میں شمار ہوتی ہیں۔ اے کیپری تو نے کیا کیا۔۔۔۔ افسوس کے سنیما انڈسٹری جسے فلم انڈسٹری کا ساتھ دینا تھا ۔۔۔ دھوکہ دے رہا ہے!!!
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial