No Image
Facebooktwittergoogle_pluslinkedin

عوامی ہڑتال… صحیح یا غلط

|
جون 1, 2017


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
کراچی کی عوام نے آخر کار پھل خریدنے سے بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے جس کی وجہ رمضان میں پھلوں کی بڑھتی ہوئی قیمت ہے۔ اس مہم کو سوشل میڈیا کے ذریعے چلایا جا رہا ہے جس کے تحت کراچی کی عوام نے عزم کیا ہے کہ وہ دو تین اور چار جون مورخہ جمعہ، ہفتہ اور اتوار افطار کے لیئے فروٹ نہیں خریدیں گے۔
پھل ایک ایسی چیز ہے جسے زیادہ دن تک محفوظ نہیں کیا جاسکتا اور گراں فروشوں کے پاس وہ ذرائع بھی موجود نہیں ہوتے جس کے ذریعے وہ پھلوں کو محفوظ کریں ۔ جب پھلوں کے بھاری نقصان کا خدشہ ہوگا تو خود ہی پھلوں کی قیمت میں کمی آئے گی۔
18740492_10158758906000191_1087740863579909697_n
کراچی کی عوام کا یہ فیصلہ لینا بھی کسی معجزے سے کم نہیں ہے کیونکہ اس عوام کو کسی چیز کی قیمت بڑھ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے۔ کراچی میں پانی ملا صحت کے معیار سے گرا ہوا دودھ 90 روپے لیٹر تک بیچا جا رہا ہے ۔ مگر یہ عوام آج تک خرید رہی ہے اور بس گلا کر رہے۔۔۔ ہائے !!!بہت مہنگائی ہے۔
یہ مہم بھی سوشل میڈیا کے چند باشعور لوگوں کی جانب سے شروع کی گئی ہے۔ جن کا مقصدپھلوں کی قیمت کم کراونا ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ کراچی کی عوام اس مہم میں کتنا ساتھ دیتی ہے۔ اس عوام نے تو رمضان سے ایک دن پہلے بھی خوب پھل خریدے تھے۔
مسئلہ کے حل کی طرف جاتے ہوئے ہمیں اس بات کو سمجھنے کی بھی ضرورت ہے کہ بہت سے پھل بیچنے والے خود بہت غریب ہوتے ہیں جن کے بچوں کی روٹی اسی فروٹ کی ریڑھی سے جڑی ہوتی ہے۔ اگر بائیکات کرنا ہے تو اس نظام کا کرنا چاہیئے جو ان پھلوں کوغیر ضروری ٹیکسوں اور ناجائز منافع پر بیچ رہا ہے۔ اور عوام کا خون نچوڑے جا رہا ہے. یہ بیچارے ریڑھی والے تو خود مہنگے داموں پھل خریدنے پر مجبور ہوتے ہیں۔
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial