No Image
Facebooktwittergoogle_pluslinkedin

فاطمہ ثریا بجیا

|
فروری 11, 2016


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
فاطمہ ثریا بجیا، ایک وہ نام کہ جس نے اس وقت اردو کا دامن تھاما جب انگریزی کو علم کا محور مانا جانے لگا تھا۔بجیا نے یکم ستمبر 1930 میں حیدرآباد دکن ، بھارت میں قمر مقصودحیدری کے گھر آنکھ کھولی۔ آپ کا تعلق ایک تعلیمی و ادبی گھرانے سے تھا۔بجیا کے والد علی گڑھ یونیورسٹی کے فارغ التحصیل تھے۔ آپ کے بھائی انور مقصود ،پاکستان میں اردو مزاح کا ایک بڑا نام ہیں ۔
اسکے علاوہ آپ کے گھرانے میں زہرا نگاہ ، احمد مقصود حیدری اور زبیدہ طارق شامل ہیں۔ بجیا کہتی تھیں کہ انکی تعلیم و تربیت گھر میں ہی کی گئی ۔۔"میں کبھی اسکول نہیں گئی۔ میرے بڑوں نے تعلیم کے ساتھ ساتھ ادب کی تربیت بھی کی۔" پاک بھارت 1965 کی جنگ میں آپکے مرتب کیے جنگی ترانوں کا مجموعہ "جنگ ترنگ" کافی مقبول ہوا۔ بجیا نے ٹی وی کا آغاز 1966 سے کیا۔ اس سے پہلے آپ نے کراچی میں ایک اسکول میں بطور استانی اپنی خدمات انجام دیں ۔محترمہ نے پاکستان ٹیلی وژن کے لیے بے شمار ڈرامے تحریر کیے۔ اوراق، شمع، افشاں ، عروسہ، گھر اک نگر، انا ، کرنیں ، آگہی، اور زینت آپکے قلم کی شاہکار تخلیقات میں سے ہیں۔اسکے علاوہ آپ نے مختلف دستاویزی پروگرام بھی کیے۔آپکے قلم نے خواتین کو واضح اور خوبصورت راہیں دکھائیں۔اور حقیقی طور پر عورت کے لیے ایک رول ماڈل پیش کیا۔
Fatima_Surayya_Bajia
BAJIYA 2
فاطمہ ثریا بجیا نے تحقیقی کام بھی انجام دیے۔ آبگینے آپ کی تحقیق کا منہ بولتا ثبوت ہے،جو تاریخ اسلام کی خواتین کے کارناموں پر مبنی ہے۔ اسکے علاوہ بھی زبیدہ اور خیزران جیسے تحقیقی کام موجود ہیں۔ امتل رحمٰن خاتون جیسی بلند مقام ناول نگار کو نئی نسل میں متعارف کرانے کا سہرا بھی آپ کے سر سجتا ہے ۔ آپ نے اردو کلاسک پر ریسرچ کا کام بھی شروع کیا۔
سن 2012 مین فاطمہ ثریا بجیا کو انکی امتیازی صلاحیت و خصوصیت کی بنا پر صدارتی تمغہ امتیاز سے نوازا گیا۔ اسی سال سیدہ عفت حسن رضوی نے بجیا کی سوانح حیات "آپ کی بجیا" کے نام سے مرتب کی۔
فروری 10، 2016 کو فاطمہ ثریا بجیا نے اس دار فانی سے رخصت طلب کی اور اپنے خالق حقیقی سے جا ملیں۔ آپ کی کمی ہمیں ہمیشہ محسوس ہوتی رہے گی۔ آپ کے جانے سے جو خلاء واقع ہوا ہے وہ کبھی کوئی پر نہیں کر سکتا ۔
 
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial