No Image
Facebooktwittergoogle_pluslinkedin

دل یہ ڈانسر ہو گیا

|
اگست 5, 2016


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
عید الضحیٰ پر آنے والی فلم ایکٹر ان لاء کا گانا "دل یہ ڈانسر ہوگیا" ریلیز کردیا گیا ۔ یہ گانا عاطف اسلم نے گایا ہے۔ انھیں چاہنے والے انہی سے پتا کریں کہ کیوں گایا ہے۔ گانے بنانے کا مقصد یہ تھوڑی ہوتا ہے کہ گلوکار لیا اور بنا دیا۔ شاعری بھی ضروری ہے ۔ مگر یہاں تو کیا شاعری ہے ، دل یہ ڈانسر ہوگیا ، تیرے دل کے چینل کا مائیکل جیکسن ہوگیا۔ کسی شاعر سے شاعری کرواتے تو اچھا ہوتا۔موسیقار موسیقی کے ساتھ ساتھ گانے بھی لکھیں گے تو ایسے ہی بنیں گے۔کسی بھی گانے کی اہم ترین چیز اس گانے کی شاعری ہے۔ اگر اسی پر محنت نہیں کی جائے تو سب فضول جاتا ہے۔ گانے کا میوزک برا نہیں ہے مگر شاعری اچھی نہ ہو تو کیا فائدہ۔ بھارتی فلم سلطان آئی جس کا گانا "بے بی کو بیس پسند ہے" کافی مشہور ہوا۔ شکر ہے "بے بی کو بیس پسند ہے" اس فلم کے لیے نہیں لکھا گیا ۔ ورنہ تو اس میں بے بی کو کیا کیا پسند ہوجاتا ہمیں نہیں پتا۔ گانے میں انگریزی کے الفاظ ڈالے جاتے ہیں ۔ بھارت میں ارشاد کامل اس طرح کے گانے لکھتے رہتے ہیں ۔ بے بی کو بیس پسند ہے بھی انہی کا لکھا گانا تھا۔ مگر ان کو لکھنا آتا ہے جبھی وہ موقع کے لحاظ سے لکھ لیتے ہیں۔ یہاں تو کوئی بھی موقع ہو ، دل کے چینل کا مائیکل جیکسن بننے کا کوئی موقع پیدا ہی نہیں ہوسکتا ۔ ایسے گانے بنانے کا شوق ہے تو شاعر سے شاعری کروائیں ۔ یہ کیا میوزک ڈائیریکٹر ہی اٹھے اور گانے لکھنا شروع کردے۔ گانے کی شاعری اچھی ہوتی تو یہ گانا بھی اچھا ہوجاتا ۔ میوزک اچھی ہے عاطف اسلم نے گایا ہے۔ ساری تباہی گانے کی فضول اور بیکار شاعری نے کردی ہے۔اور اسطرح کے گانے اکثر تھوڑے تیز ہوتے ہیں ، یہ تو بہت ہی سست ہے۔ سنتے ہوئے نیند ہی آجائے ۔ لیکن بیکار شاعری آپ کے دماغ کو جگا دے گی۔
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial