شرم فل اکمل

|
اگست 20, 2017


Facebooktwittergoogle_pluslinkedin
کرکٹ پر احسان کرتے کرتے عمر اکمل نے اردو پر بھی احسان کردیا اور لغت میں ایک نیا لفظ "شرم فل" متعارف کروا دیا ہے۔ یہ لفظ انھوں نے لاہور سے کی گئی پریس کانفرنس کے دوران استعمال کر کے اردو زبان کو جلا بخشی اور پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر پر برے رویے اور گالم گلوچ کرنے کا الزام لگایا ۔ پاکستان کرکٹ ٹیم کے دوسرے سیلفی ماسٹر نے پوری پریس کانفرنس میں کوئی بھی ایسا لفظ نہیں بتایا جو کہ گالی میں شمار کیا جاسکے مگر ہیڈ لائینز کی زینت بننے کے لیے شاید اتنا ہی کافی تھا۔
عمر اکمل کو سمجھ لینا چاہیئے کہ ٹیم کو ان کی واقعی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ مکی آرتھر نے اگر انھیں صرف کلب سے کھیلنے کا مشورہ دیا ہے تو اس میں کوئی غلط بات نہیں۔ عمر اکمل کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان کا نام روشن کرنا چاہتے ہیں ، اگر واقعی وہ ایسا کرنا چاہتے ہیں تو انھیں چاہیئے وہ پاکستان ٹیم کی طرف سے کھیلنے کی درخواست بھی کرنا چھوڑ دیں۔
عمر اکمل کے ساتھ جیسا بھی رویہ رکھا گیا اس کی تحقیقات کروائی جائیں ، مگر جن سینئر زکا اور "انضی بھائی" کا عمر اکمل گلہ کر رہے ہیں تو انھیں یہ بھی یاد رکھنا چاہیئے پاکستان کے چیف سلیکٹر انضمام الحق نے تو ان کا اتنا ساتھ دیا ہے کہ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی میں "اَن فٹ" عمر اکمل کو "فٹ" قرار دے کر بھیج دیا تھا۔
چیمپئنز ٹرافی کے بعد یہ بات تو صاف ہے کہ عمر اکمل کی ٹیم میں کوئی جگہ نہیں ۔ ان کے ریکارڈ پر نظر ڈالی جائے تب بھی یہی جواب ملتا ہے۔ البتہ پی سی بی کو مکی آرتھر کے رویے سے متعلق عمر اکمل کے الزام کی تحقیقات کروانی چاہیئے تاکہ دودھ کا دودھ، پانی کا پانی ہوجائے۔۔۔۔
اپنی رائے کا اظہار کریں

. .

Social media & sharing icons powered by UltimatelySocial